Monday | 06 April 2020 | 12 Shabaan 1441
Gold NisabSilver NisabMahr Fatimi
$4670.72$295.51$738.77

Fatwa Answer

Question ID: 1004 Category: Worship
Kaffarah for breaking fast purposefully

Assalamualaikum,

What is the kaffarah for breaking the fast of Ramadan on purpose? Can it be done through donating money to the poor? If so, how much?

الجواب وباللہ التوفیق

The Kaffarah for intentionally breaking the fast is to free a slave man or a slave woman. If it is not possible as it is at the prevailing time then one should fast consecutively for two months and should not miss any day during these two months otherwise he/she would have to start anew (this can be accomplished with little exertion in the shorter days of the year) and if one does not have even this ability then he/she should feed sixty poor persons to their stomach fill for two times, i.e. if one does not have the strength to fasting in Kaffarah then money can be given which is to give wheat equivalent to the Sadaqatul Fitr (one kilo and 633 grams) or its price (according to the rate of average wheat in the market) to each of the sixty poor persons.  

أَطْعَمَ مِسْكِينًا وَاحِدًا سِتِّينَ يَوْمًا كُلَّ يَوْمٍ أَكْلَتَيْنِ مُشْبِعَتَيْنِ جَازَ وَلَوْ أَطْعَمَ مِائَةً وَعِشْرِينَ وَلَوْ مِسْكِينًا دَفْعَةً وَاحِدَةً فَعَلَيْهِ أَنْ يُطْعِمَ أَحَدَ الْفَرِيقَيْنِ أَكْلَةً مُشْبِعَةً أُخْرَى كَذَا في السِّرَاجِ الْوَهَّاجِ إذَا غَدَّاهُمْ وَأَعْطَاهُمْ قِيمَةَ الْعَشَاءِ أو عَشَّاهُمْ وَأَعْطَاهُمْ قِيمَةَ الْغَدَاءِ يَجُوزُ هَكَذَا ذُكِرَ في الْأَصْلِ( فتاوی عالمگیری)

واللہ اعلم بالصواب

Question ID: 1004 Category: Worship
جان بوجھ کر رمضان کا روزہ توڑنے کا کفارہ

السلام علیکم

رمضان کے روزے کو جان بوجھ کر توڑنے کا کیا کفارہ ہے؟کیا یہ کفارہ غریبوں کو رقم دینے سے ادا ہوجائے گا؟ اگر ہاں تو کتنی رقم؟

الجواب وباللہ التوفیق

عمدارمضان کا روزہ توڑنے کا کفارہ یہ ہے کہ غلام یا باندی ٓزاد کرے اگر یہ ممکن نہ ہو جیساکہ آج کا دور ہے تو لگاتار دو مہینے کے روزے رکھے درمیان میں ایک بھی  ناغہ نہ کرے ورنہ پھر از سر نو رکھنا پڑے گا(یہ تھوڑی بہت مشقت سے سال کے چھوٹے دنوں میں رکھے جاسکتے ہیں) اور اگر اس کی بھی طاقت نہ ہو تو ساٹھ مسکینوں کو دونوں وقت پیٹ بھر کھانا کھلائے،کفارہ میں روزہ پر قدرت نہ ہوتو قیمت دی جاسکتی ہے اور وہ یہ ہے کہ ساٹھ مسکینوں میں سے ہر ایک کو صدقۃ الفطر(ایک کیلو /۶۳۳ گرام ) کے بقدر گیہوں یا اس کی قیمت  (بازار میں متوسط قسم کے گیہوں کے حساب سے)ادا کی جائے۔

أَطْعَمَ مِسْكِينًا وَاحِدًا سِتِّينَ يَوْمًا كُلَّ يَوْمٍ أَكْلَتَيْنِ مُشْبِعَتَيْنِ جَازَ وَلَوْ أَطْعَمَ مِائَةً وَعِشْرِينَ وَلَوْ مِسْكِينًا دَفْعَةً وَاحِدَةً فَعَلَيْهِ أَنْ يُطْعِمَ أَحَدَ الْفَرِيقَيْنِ أَكْلَةً مُشْبِعَةً أُخْرَى كَذَا في السِّرَاجِ الْوَهَّاجِ إذَا غَدَّاهُمْ وَأَعْطَاهُمْ قِيمَةَ الْعَشَاءِ أو عَشَّاهُمْ وَأَعْطَاهُمْ قِيمَةَ الْغَدَاءِ يَجُوزُ هَكَذَا ذُكِرَ في الْأَصْلِ( فتاوی عالمگیری)

واللہ اعلم بالصواب