Thursday | 04 June 2020 | 12 Shawaal 1441
Gold NisabSilver NisabMahr Fatimi
$4836.09$350.63$876.59

Fatwa Answer

Question ID: 1018 Category: Permissible and Impermissible
Clapping

Assalamualaikum,

  1. Is clapping permissible in Islam? Is there any Hadith regarding clapping?
  2. When we make Dua in a majlis, can we recite Durud then Surah Fatihah, Surah Ikhlas, Surah Falaq, and then Surah Nas? Someone said to me I should first recite Surah Nas then Surah Falaq, and Surah Ikhlas the last.

 

Jazakallah

الجواب وباللہ التوفیق

  1. It is not an Islamic act to clap in gatherings or at the occasions of Quran and Naat recitation. To praise someone at these occasions one should say Subhanallah, Maashaa Allaah, and Allahu Akbar. I do not know of a Hadith in this context, however, the mention of the Mushrikin clapping and whistling as a worship and Salat is done in a disliked and an undesirable act.

وَمَا كَانَ صَلَاتُهُمْ عِنْدَ الْبَيْتِ إِلَّا مُكَاءً وَتَصْدِيَةً فَذُوقُوا الْعَذَابَ بِمَا كُنْتُمْ تَكْفُرُونَ (سورہ انفال:۳۵)

 ( وَ ) كُرِهَ ( كُلُّ لَهْوٍ ) لِقَوْلِهِ عَلَيْهِ الصَّلَاةُ وَالسَّلَامُ " { كُلُّ لَهْوِ الْمُسْلِمِ حَرَامٌ إلَّا ثَلَاثَةً مُلَاعَبَتَهُ أَهْلَهُ وَتَأْدِيبَهُ لِفَرَسِهِ وَمُنَاضَلَتَهُ بِقَوْسِهِ } " ( قَوْلُهُ وَكُرِهَ كُلُّ لَهْوٍ ) أَيْ كُلُّ لَعِبٍ وَعَبَثٍ فَالثَّلَاثَةُ بِمَعْنًى وَاحِدٍ كَمَا فِي شَرْحِ التَّأْوِيلَاتِ وَالْإِطْلَاقُ شَامِلٌ لِنَفْسِ الْفِعْلِ ، وَاسْتِمَاعُهُ كَالرَّقْصِ وَالسُّخْرِيَةِ وَالتَّصْفِيقِ وَضَرْبِ الْأَوْتَارِ مِنْ الطُّنْبُورِ وَالْبَرْبَطِ وَالرَّبَابِ وَالْقَانُونِ وَالْمِزْمَارِ وَالصَّنْجِ وَالْبُوقِ ، فَإِنَّهَا كُلَّهَا مَكْرُوهَةٌ لِأَنَّهَا زِيُّ الْكُفَّارِ ، (ردالمحتار :کتاب الحضر والاباحۃ ،فصل فی البیع)۔

  1. You may recite this way if you are reciting for a specific wisdom or purpose. Similarly, if you have a specific purpose for the reverse method then you may ask your question again mentioning it.

واللہ اعلم بالصواب

Question ID: 1018 Category: Permissible and Impermissible
تالیاں بجانا

 السلام علیکم

(۱) کیا اسلام میں تالیاں بجانا جائز ہے؟ کیا تالیاں بجانے کے بارے میں کوئی حدیث ہے؟

(۲)کیا ہم ایک مجلس میں دعا کرتے ہوئے درود، پھر سورہ فاتحہ، سورہ اخلاص، سورہ فلق ،اور پھر سورہ ناس پڑھ  سکتے ہیں، کسی نے مجھے کہا کہ مجھے پہلے سورہ ناس، پھر فلق، پھر سورہ اخلاص پڑھنی چاہیے۔  

جزاک اللہ 

الجواب وباللہ التوفیق

(1)محافل اور مجالس کے موقعوں پر یاقرات نعت اور تقاریر کے موقعوں پر تالی بجانا اسلامی عمل نہیں ہے ان موقعوں پر کسی کی داد و تحسین کے لیے سبحان اللہ ،ماشاء اللہ اور اللہ اکبر کہنا چاہیے،اس بارے میں حدیث میرے علم میں نہیں ہے،البتہ قرآن کریم میں مشرکوں کےبیت اللہ کے پاس نماز اور عبادت کے طریقہ میں سیٹی اور تالی بجانے کا تذکرہ  امر منکر اور ناپسندیدہ طور پر ذکر کیا گیا ہے۔

وَمَا كَانَ صَلَاتُهُمْ عِنْدَ الْبَيْتِ إِلَّا مُكَاءً وَتَصْدِيَةً فَذُوقُوا الْعَذَابَ بِمَا كُنْتُمْ تَكْفُرُونَ (سورہ انفال:۳۵)

 ( وَ ) كُرِهَ ( كُلُّ لَهْوٍ ) لِقَوْلِهِ عَلَيْهِ الصَّلَاةُ وَالسَّلَامُ " { كُلُّ لَهْوِ الْمُسْلِمِ حَرَامٌ إلَّا ثَلَاثَةً مُلَاعَبَتَهُ أَهْلَهُ وَتَأْدِيبَهُ لِفَرَسِهِ وَمُنَاضَلَتَهُ بِقَوْسِهِ } " ( قَوْلُهُ وَكُرِهَ كُلُّ لَهْوٍ ) أَيْ كُلُّ لَعِبٍ وَعَبَثٍ فَالثَّلَاثَةُ بِمَعْنًى وَاحِدٍ كَمَا فِي شَرْحِ التَّأْوِيلَاتِ وَالْإِطْلَاقُ شَامِلٌ لِنَفْسِ الْفِعْلِ ، وَاسْتِمَاعُهُ كَالرَّقْصِ وَالسُّخْرِيَةِ وَالتَّصْفِيقِ وَضَرْبِ الْأَوْتَارِ مِنْ الطُّنْبُورِ وَالْبَرْبَطِ وَالرَّبَابِ وَالْقَانُونِ وَالْمِزْمَارِ وَالصَّنْجِ وَالْبُوقِ ، فَإِنَّهَا كُلَّهَا مَكْرُوهَةٌ لِأَنَّهَا زِيُّ الْكُفَّارِ ، (ردالمحتار :کتاب الحضر والاباحۃ ،فصل فی البیع)۔

(۲) پڑھ سکتے ہیں ،لیکن اگر کوئی خاص حکمت  یا مقصدکے تحت پڑھ رہے ہوں ،اسی طرح الٹی ترتیب کا بھی کوئی مقصد ہوتو اس کو لکھ کر دوبارہ مسئلہ دریافت کرلیں۔

واللہ اعلم بالصواب