Friday | 13 December 2019 | 16 Rabiul-Thani 1441
Gold NisabSilver NisabMahr Fatimi
$4133.53$331.73$829.34

Fatwa Answer

Question ID: 139 Category: Permissible and Impermissible
Consumable Things of Halal Animals

Assalamualaikum Warahmatullah 

Are the hooves also known as paya, bone marrow also known as nalli, brain etc. of a goat considered halal? Can you please also mention the organs which are not considered halal for consumption by Muslims?

JazakAllahu Khaira

Walaikumassalam Warahmatullahi Wabarakatuhu

الجواب وباللہ التوفیق

It is permissible to consume a goat’s feet, bones and brain. However, the things which are impermissible are as follows:

1- Blood (flowing from the body)

2- Male and female genitals

3- Testicles

4- Anus

5- Glands

6- Bladder

7- Gall Bladder

8- Haram Maghaz

Note: The seven things mentioned above are considered makrooh-e-tehreemi whereas Haram Maghaz is considered haram. Consuming or feeding these is considered impermissible and a sin. If any of these things are used in preparing a dish, that whole dish will also be considered impure.

(مصنف عبدالرزاق :۴۰۹،سنن الکبری للبیہقی:۱۰؍۷۔ بدائع الصنائع : کتاب الذبائح والصیود،۶؍۲۷۲)

فقط واللہ اعلم بالصواب

Question ID: 139 Category: Permissible and Impermissible
حلال جانوروں کے ممنوع اعضاء

 

 

السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ

کیا بکروں کے پائے، نلی ، دماغ وغیرہ حلال ہیں؟ کیا آپ ان تمام اعضاء کا ذکر کر سکتے ہیں جو ہم مسلمان ہونے کے ناطے نہیں کھا سکتے ہیں؟

جزاک اللہ خیرا۔

وعلیکم السلام ورحمۃ اللہ وبرکاتہ

الجواب وباللہ التوفیق

بکروں کے پائے،نلی،دماغ حلال ہے،البتہ وہ چیزیں جن کا کھانا ممنوع ہے وہ یہ ہیں: (۱)دمِ مسفوح (بہتا ہوا خون)۔(۲) نر اور مادہ کی پیشاب کی جگہ۔(۳) خصیے… (فوطے؍کپورے)۔(۴) پاخانہ کی جگہ۔(۵) غُدود…(سخت گوشت؍خون جم کر گُٹھلی کی شکل میں ہوجانا)۔(۶) مَثانہ …(پیشاب کی تھیلی)۔(۷) پِتّہ۔ (۸) حرام مغز۔نوٹ: مذکورہ بالا سات چیزیں مکروہِ تحریمی ہیں، اور ’حرام مغز‘ حرام ہے، ان کا کھانا اور کھلانا ناجائز اور گناہ ہے، اگر ان میں سے کسی چیز کاسالن پکالیا گیا، تو وہ سالن بھی ناپاک ہوجائے گا۔ (مصنف عبدالرزاق :۴۰۹،سنن الکبری للبیہقی:۱۰؍۷۔ بدائع الصنائع : کتاب الذبائح والصیود،۶؍۲۷۲)

فقط واللہ اعلم بالصواب