Monday | 11 November 2019 | 14 Rabiul-Awal 1441

Fatwa Answer

Question ID: 284 Category: Worship
Breaking of fast before Iftaar time due to the wrong Adhaan

Assalamualaikum,

During one of the days of fasting of Ramadhan, as usual, people were sitting in the inside rooms of the Masjid to break the fast. As the iftar time approached, Adhaan was heard and most of the people including me made the du'aa and ate the date to break the fast. Suddenly somebody said it was not the Adhaan of the Masjid but from a phone (basically the phone Adhaan played 2-3 minutes before the Masjid's Adhaan). So I stopped eating further and waited for the Masjid's Adhaan to be called and once it was called I continued the eating.

My question is: Will I have to offer a Qazaa Roza because of this error? (I did not break the fast 3 minutes early on purpose. It was just due to an Adhaan from the phone which sounded very much like the real Adhaan.) Or do I need to do a Kaffaarah?

Jazakallah Khair.

 

الجواب وباللہ التوفیق

If one breaks fast before the scheduled time then do Qazaa of one day of fasting, the Kaffarah is not Wajib (compulsory).

لو أكل مكرها أو مخطئا عليه القضاء دون الكفارة كذا في فتاوى قاضي خان.{فتاوی عالمگیری:کتاب الصوم، النوع الأول ما يوجب القضاء دون الكفارة}

واللہ اعلم بالصواب

Question ID: 284 Category: Worship
غلط اذان سن کر وقت سے پہلے روزہ کھولنا

السلام علیکم

رمضان کے روزوں میں ایک روزے کے دوران لوگ مسجد میں  افطار سے قبل بیٹھے تھے، جیسے وقت قریب آیا اور آذان ہوئی زیادہ تر لوگوں نے کھجور لے کر دعا پڑھی اور روزہ کھول لیا، انھی لوگوں میں میں بھی شامل تھا۔ میرے کھجور کھاتے ہی کسی نے کہا کہ یہ آذان مسجد سے نہیں ہوئی تھی بلکہ کسی کے فون پر ہوئی تھی، جو قریب ۲/۳ منٹ پہلے ہو گئی تھی۔ اس  موقع پر میں نے کھانا بند کر دیا اور مسجد کی آذان کا انتظار کرنے لگا۔ جب  آذان ہو گئی  تو پھر کھانا شروع کیا۔

کیا مجھے اس روزے کی قضاء ادا کرنا ہوگی، اس غلطی کی وجہ سے؟ میں نے روزہ جان بوجھ کر ۳ منٹ پہلے نہیں کھولا تھا ، بلکہ اس فون کی آذان سے دھوکہ ہونے کی وجہ سے روزہ کھول لیا تھا، جو بالکل اصل آذان کی طرح سے محسوس ہوئی تھی۔ یا پھر مجھے کفارہ ادا کرنا پڑے گا؟جزاک اللہ خیر

 

 

الجواب وباللہ التوفیق

اگر وقت ہونے سے  پہلے غلطی سے  روزہ کھول لیا  ہوتو دوبارہ ایک روزہ کی قضاء کریں،کفارہ واجب نہیں۔

لو أكل مكرها أو مخطئا عليه القضاء دون الكفارة كذا في فتاوى قاضي خان.{فتاوی عالمگیری:کتاب الصوم، النوع الأول ما يوجب القضاء دون الكفارة} ۔

واللہ اعلم بالصواب