Monday | 11 November 2019 | 14 Rabiul-Awal 1441

Fatwa Answer

Question ID: 297 Category: Etiquettes
Sensitive issue

I am in a great dilemma and would appreciate if you can shed some light regarding the following incident that happened in my close family.

A 6-year-old boy was found re-enacting an intimate position on a same age girl. It was found by the girl’s parents in their house. The girl was totally unaware of what was happening to her. Both kids are cousins and had their clothes on. This happened in the bedroom and the door was open. The boy was visiting with his grandparents (who are also the girl's grandparents) and his parents were out of town at that moment.

When informed, the boy’s parents reaction was that its human nature to be curious and this is how boys are. Some boys hide and do it and some don’t. It is not something that should be made into a big deal.

Is this something that needs to be disregarded because it's in a boy’s nature? I have a young son as well, what should I do if I find myself in a similar situation?

I would greatly appreciate if you can please advice how a sensitive matter like this should be dealt with in our Deen.

JazakAllah khair

الجواب وباللہ التوفیق

It is obvious that this is a very bad act, even though it is an age of immaturity, however, children should be stopped from it, and the reaction comments of the parents are also inappropriate, though it is correct that one should not make such things a big deal, however, it doesn’t mean either that one should keep silence seeing kids doing like this and leave them. For this reason the children should be watched over, and it is eminent for the parents too not to fulfill their physical needs in the presence of the children, this is against modesty and also against the training of the children.   

واللہ اعلم بالصواب

Question ID: 297 Category: Etiquettes
نازک مسئلہ

 

میں ایک عجیب مخمصے میں گرفتار ہوں، بڑی مہربانی ہو گی اگر آپ اس سلسلے میں میری راہنمائی فرما دیں ، یہ واقعہ میرے قریبی رشتے داروں سے متعلق ہے ، ایک چھ سالہ لڑکا ، اس لڑکی جو چھ سال کی ہی ہے، کہ ساتھ ایک ایسی ہیت / پوزیشن بناتے ہوئے لڑکی کے والدین سے پکڑا گیا  ، جو عام طور پر میاں بیوی کے درمیان ہوتی ہے۔ بچی کو بالکل بھی علم نہ تھا کہ اس کے ساتھ کیا ہو رہا ہے، دونوں بچے آپس میں کزن ہیں اور ان کے بدن پر کپڑے پورے تھے، یہ لڑکی کے والدین کے بیڈروم میں ہوا جس کا دروازہ کھلا ہوا تھا، وہ بچہ دراصل اپنے دادا ، دادی کے گھر آیا ہوا تھا، جو اس لڑکی کے بھی دادا ، دادی ہیں، چونکہ اس کے والدین شہر سے باہر گئے ہوئے تھے۔ جب اس بات کا ذکر لڑکے کے والدین سے کیا گیا تو ان کا یہ جواب تھا کہ تجسس  انسانی فطرت ہے ، اور لڑکے ایسے ہی ہوتے ہیں۔ کچھ لڑکے چھپ کر یہ سب کرتے ہیں، کچھ نہیں کرتے۔ اور یہ کہ اس مسئلے کو کوئی بہت بڑا مسئلہ  نہیں بنانا چاہئے۔

کیا یہ کوئی ایسی بات ہے جس کا کوئی خیال نہیں کرنا چاہئے کیونکہ لڑکے ایسے ہی ہوتے ہیں ؟میرا بھی ایک اسی عمر کا لڑکا ہے اور میں یہ جاننا چاہتا ہوں کہ اگر میں اس کو کسی ایسے عمل میں دیکھوں تو مجھے کیا کرنا چاہئے۔ آپ کی بڑی مہربانی ہو گی اگر آپ راہنمائی فرما دیں کہ اس نازک مسئلے کو دین کی روشنی میں کس طرح حل کرنا چاہئے۔ جزاک اللہ خیرا.

 

الجواب وباللہ التوفیق

ظاہر ہےکہ یہ انتہائی برا فعل ہے، اگرچہ یہ بے شعوری کی عمر ہوتی ہے لیکن بچوں کو اس سےروکنا چاہیے،اور لڑکے والدین کے ری ایکشن والے کلمات  بھی نا مناسب ہیں،البتہ یہ صحیح ہےکہ  ایسی چیزوں  کو بڑا نہیں بنانا چاہیئے،لیکن اس کا مطلب یہ بھی نہیں کہ بچوں کو اس طرح کرتے دیکھ کر خاموشی اختیار  کی جائے اور انہیں چھوڑدیا جائے،اس لئےبچوں کی نگرانی بھی کرتے رہنا چاہئے،اور والدین کو بھی چاہیے کہ بچوں کی موجودگی میں پنے طبعی تقاضوں کو پورا نہ کریں،یہ حیا اور بچوں کی تربیت کے  بھی خلاف ہے۔

والسلام