Thursday | 14 November 2019 | 17 Rabiul-Awal 1441

Fatwa Answer

Question ID: 353 Category: Miscellaneous
How to recite Du'aas in the bathroom?

Assalamualaikum,

The bathrooms in the house are very big in wihch both the toilet and the wudu area are there. Before entering the bathroom we recite the Du'aa for entering the toilet, but getting done with the toilet when we go towards the wudu area then can we make an imaginary line between them that crossing that we recite the Du'aa of exiting the toilet area and then can read the Du'aas of starting the wudu?

الجواب وباللہ التوفیق

In the situation inquired about if there is distinction between the wudu place and the toilet area or the toilet area is so big that the bath or wudu area is so far that the bad odor of the toilet area is not felt there then the Du’aas of Wudu and of after relieving from the toilet can be read there. If it is so close that the bad odor is felt there then there is no permissibility for reading these Du’aas. Either you should read the Du’aas in the heart or read them coming out of the bathroom.

عن أنس بن مالك  رضي الله عنه قال كان النبي  صلي الله عليه وسلم إذا دخل الخلاء قال اللهم إني أعوذ بك من الخبث والخبائث. ( صحيح البخاري ت-رقم6322-ج16/68) (وعن أنس  رضي الله عنه قال: «كان رسول  الله  -  صلي الله عليه وسلم - إذا دخل الخلاء» : أي: إذا أراد دخول الخلاء(المرقات ج1ص375)

ما في ’’ مراقي الفلاح مع حاشیۃ الطحطاوي ‘‘ : ویدخل الخلاء ۔۔۔۔۔۔ والمراد بیت التغوُّط برجلہ الیسری ۔۔۔۔ و ۔۔۔۔ یستعیذ ۔۔۔۔۔ باللّٰہ من الشیطان الرجیم قبل دخولہ وقبل کشف عورتہ ۔ (مراقي الفلاح) ۔ وفي ’’ حاشیۃ الطحطاوي ‘‘ : قولہ : (قبل دخولہ) الأولی التفصیل ، وہو إن کان المعد لذلک یقول قبل الدخول ، وإن کان غیر معد کالصحراء ففي أوان الشروع کتشمیر الثیاب مثلا قبل کشف العورۃ ، وإن نسي ذلک أتی بہ في نفسہ لا بلسانہ ۔ (ص/۵۱ ، ط : دار الکتب العلمیۃ بیروت)

واللہ اعلم بالصواب

Question ID: 353 Category: Miscellaneous
حمام وبیت الخلا میں استنجاء سے فراغت کی دعا کب پڑھیں؟)

السلام علیکم 

گھر کے باتھ روم بہت بڑے ہیں جن میں بیت الخلا اور وضو کی جگہ دونوں ہیں۔ ہم اندر جانے سے پہلے بیت الخلا کی دعاء پڑھتے ہیں،لیکن جب بیت الخلا سے  فارغ ہونے کے بعد وضو کی جگہ کی طرف جاتے ہیں تو کیا ہم ان کے درمیان میں ایک خیالی لائن بناسکتے ہیں کہ اس کو پار کرکے ہم بیت الخلا سے نکلنے کی دعا پڑھ لیں اوراس کے بعد وضو شروع کرنے کی دعائیں پڑھ سکتے ہیں ؟

الجواب وباللہ التوفیق

صورت مسؤلہ میں اگر وضو خانہ اور بیت الخلاء میں امتیاز ہو یا بیت الخلاء اتنا بڑا ہوکہ غسل خانہ اتنے فاصلہ پر ہو کہ بیت الخلاء کی بدبو وہاں محسوس نہ ہوتی ہو تووہاں بیت الخلاء سے فراغت اور وضو کی دعائیں پڑھ سکتے ہیں، اگر اتنا قریب ہو کہ بدبو آرہی ہو تو ایسی صورت میں ان دعاؤں کے پڑھنے کی گنجائش  نہیں،یا تودل میں دعا پڑھ لیا کریں۔یا پھر اس سے باہر نکل کر پڑھ لیں۔

) (وعن أنس  رضي الله عنه قال: «كان رسول  الله  -  صلي الله عليه وسلم - إذا دخل الخلاء» : أي: إذا أراد دخول الخلاء(المرقات ج1ص375)

ما في ’’ مراقي الفلاح مع حاشیۃ الطحطاوي ‘‘ : ویدخل الخلاء ۔۔۔۔۔۔ والمراد بیت التغوُّط برجلہ الیسری ۔۔۔۔ و ۔۔۔۔ یستعیذ ۔۔۔۔۔ باللّٰہ من الشیطان الرجیم قبل دخولہ وقبل کشف عورتہ ۔ (مراقي الفلاح) ۔ وفي ’’ حاشیۃ الطحطاوي ‘‘ : قولہ : (قبل دخولہ) الأولی التفصیل ، وہو إن کان المعد لذلک یقول قبل الدخول ، وإن کان غیر معد کالصحراء ففي أوان الشروع کتشمیر الثیاب مثلا قبل کشف العورۃ ، وإن نسي ذلک أتی بہ في نفسہ لا بلسانہ ۔ (ص/۵۱ ، ط : دار الکتب العلمیۃ بیروت)