Tuesday | 12 November 2019 | 15 Rabiul-Awal 1441

Fatwa Answer

Question ID: 37 Category: Worship
Fasting While Travelling

Assalamualaikum Warahmatulah

Please explain what is the method for doing sehri, iftar and prayers? Do we need to follow the prayer timings of the country that we already left or the country that we are currently in?

Wassalam

الجواب وباللہ التوفیق

Assalamualaikum Warahmatullah

During travel, sehr, iftar or any other acts of worship will be performed according to the time of the location where one is performing the worship at, or the location through which one is travelling through. If it is time for sunset in that location, then iftar and the remaining salats (maghrib, isha etc.) will be performed according to that. Otherwise if it is time for sunrise then keeping the fast and reading salats during the day will be done according to that location. Similarly the time for each salah will be considered according to such location where the person is present at or travelling through.

The country from which you are travelling or the one you are travelling towards will not be considered in establishing these rules for worship.

فقط واللہ اعلم بالصواب

Question ID: 37 Category: Worship
سفر کے دوران روزے اور دیگر عبادات کے وقت کا تعین

 

 

السلام علیکم ورحمۃ اللہ

میں یہ معلوم کرنا چاہتی ہوں کہ سفر کے دوران، سحری، افطار اور نمازوں کا کیا طریقہ کار ہوگا؟ کیا ہمیں اس ملک کے مطابق نماز کے اوقات لے کر چلنا ہوں گے جس سے ہم نے سفر کے لئے کوچ کیا ہے یا پھر اس ملک میں جہاں ہم سفر کر کے پہنچے ہیں؟

والسلام

الجواب وباللہ التوفیق

السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ

دورانِ سفر سحر،افطار اور دوسری عبادات میں اس جگہ کے وقت کا اعتبار ہوتا ہے جہاں وہ عبادت انجام دی جارہی ہو،یا جہاں سے آپ گذر رہے ہوں،اگراس جگہ غروب ہو تو افطار اور رات کی نمازیں اس سے متعلق ہوگی،اور طلوع ہوتو روزہ اور دن کی نمازیں اس سے متعلق ہوں گی،اور نمازوں کے اوقات بھی اسی جگہ کے معتبر ہوں گے۔

جس ملک سے آپ نے سفر کیا ہے،یا جس ملک کی طرف آپ سفر کررہے ہیں اس کا اعتبار نہیں ہوگا۔

فقط واللہ اعلم بالصواب