Tuesday | 12 November 2019 | 15 Rabiul-Awal 1441

Fatwa Answer

Question ID: 405 Category: Permissible and Impermissible
Communication between boy and girl before marriage

 

Assalaamualaikum,

I am in talk to a person whom I am wishing to marry in future, but every time he talks about the closeness the married couple have. He is not bad in his character, but i wanted him to keep it in control till getting married. Sometime I get fear about intimacy because I actually don't want that to happen, I mean the consummation of marriage. I fear when I hear about it. I wanted him to understand that I wanted his support but the fear in me isn't going away whenever he talks. He leaves no stone unturned in getting diverted to the topic. I wanted a suggestion how to make him concentrated in future life and serious regarding it. He is well educated and earns too but he is always in romantic mood. Please suggest me how to make him get diverted from this and how to get rid of my fears regardiing the fear I feel whenever I think of getting married. I want a suggestion for both of us. Please kindly reply.

الجواب وباللہ التوفیق

You two are strangers for each other, and it is شرعاً (Shara’n) impermissible for a strange man and woman to talk to each other like this without any necessity. Furthermore, talking about the intimacy etc. like a married couple are more shameless. You should leave talking to him for the time being and make mashwarah (consultation) with your parents and responsible persons in this regard. Inshaa Allaah they will help you in choosing a proposal for you which will be of good manners and character and suitable for you per your situation.

واللہ اعلم بالصواب

Question ID: 405 Category: Permissible and Impermissible
نکاح سے قبل لڑکا لڑکی کا بات چیت کرنا

السلام علیکم

 میں ایک مرد سے بات چیت کررہی ہوں جس سے میں مستقبل میں شادی  کرنا چاہتی ہوں، لیکن وہ  جب بھی بات کرتا ہے، وہ شادی شدہ جوڑے  کی قربت کی بات کرتا ہے، وہ کردار کا برا نہیں ہے لیکن میں یہ چاہتی ہوں کہ وہ اسے قابو میں رکھے جب تک کہ ہماری شادی نہ ہوجائے۔

کبھی میں جسمانی قربت کے بارے میں  ڈرتی ہوں کیونکہ حقیقتاً میں نہیں چاہتی کہ یہ واقع ہو یعنی شادی کے بعد رخصتی میں خوفزدہ ہوجاتی ہوں جب میں اس کے بارے میں  سنتی ہوں۔

 میں چاہتی ہوں کہ وہ یہ سمجھے کہ میں اس کا سہارا چاہتی ہوں لیکن میرے اندر سے خوف جا نہیں رہا ہے، جب بھی وہ بات کرتا ہے وہ کوئی موقع جانے نہیں دیتا کہ وہ بات کو اسی موضوع کی طرف پھیردیتا ہے ۔

مجھے رائے چاہئے  ہے کہ کیسے اس کی توجہ مستقبل کی زندگی کی طرف مشغول کروں اور وہ اس کے بارے میں سنجیدہ ہو، وہ بہت اچھا تعلیم یافتہ ہے اور کماتا بھی ہے لیکن وہ ہمیشہ  رومانوی موڈ میں ہوتا ہے۔

برائے مہربانی میری رہنمائی کیجئے کہ میں اسے اس موضوع سے کیسے ہٹاؤں، اس میں بھی رہنمائی کیجئے کہ میں شادی  ؍ رخصتی کے بارے میں اپنے خوف سے کیسے چھٹکارا حاصل کروں یہ جو مجھے خوف آتے  ہیں جب بھی میں شادی کرنے کے بارے میں  سوچتی ہوں۔ میں ان معاملوں میں ہم دونوں کے لیئے رہنمائی چاہتی ہوں۔ برائے مہربانی جواب دیجئے

الجواب وباللہ التوفیق

آپ دونوں ایک دوسرے کے لئے اجنبی ہیں، اوراجنبی مرد وعورت کا ایک دوسرے سے  اس طرح بلا ضرورت  بات چیت کرنا  شرعاًجائز نہیں ہے۔نیز   شادی شدہ جوڑے کی  طرح قربت وغیرہ سے متعلق باتیں اور بھی زیادہ بے حیائی کی ہیں،آپ فی الحال بات کرنا ترک دیں،آپ اپنے والدین اور ذمہ دار احباب سے اس بارے میں مشورہ کریں  انشاء اللہ  تعالی وہ اخلاق و کردار  اور آپ کے مناسب حال جو رشتہ ہوگا اس کے انتخاب  میں آپ کی مدد کریں گے

واللہ اعلم بالصواب