Friday | 05 June 2020 | 13 Shawaal 1441
Gold NisabSilver NisabMahr Fatimi
$4731.19$341.97$854.93

Fatwa Answer

Question ID: 59 Category: Social Dealings
Meanings of Name Hanfah

Assalamualaikum Warahmatullah

Mufti sahib, alhumdulillah we are expecting a baby girl. Me and my wife really like the name Hanfa, (name of the wife of Hazrat Ismail Alyhissalam). Can you please let us know the meanings, origin and correct pronunciation of this name?

JazakaAllahu Khaira

Walaikumassalam Warahmatullah

الجواب وباللہ التوفیق

In the history and seerah books, there are many different mentions about the name of Hazrat Ismaeel Alyhissalam’s wife, one of which is Hanfah, which you have inquired about in your question. This word means a foot which is bent, bow, shaving blade, chamalion etc. In addition to this name, some of the other names mentioned in these books are:

(1) Ra‘lah

(2) Syedah (al-Mufassil fi-Tareekh al-Arab, Pg.85, Vol.2)

(3) Jiddah

(4) Samah

(5) Atikah

(6) Halah

(7) Hanfah

(8) Najadah

Hafiz Ibn al-Hajr Rehmatullah Aleh has given preference to the name Ra‘lah. Majority of the historians have mentioned this as her name with the following meanings:

1- Forerunner

2- Female Ostrich

3- Family or a large family or people under training

4- The small skin of a four legged animal's ear which has been split and hung back

5- A tall date palm (tree)

6- A type of plant whose fruit is of the shape of brinjal and has thorny texture

If the word is pronounced as Ru'lah then its meanings become:

1- The sprouting bud of the grape vine (vine - angoor kee bail)

2- A crown of flowers worn on one's head

It should be noted that all of the above details are historical in nature some of which are mentioned in the tails of Israelites. They cannot be confirmed or denied. Such lineage is not required and cannot be trusted.

حديث بن عباس في تزوج إسماعيل بن إبراهيم بالمرأتين من جرهم واحدة بعد أخرى أما الأولى فقال المسعودي في مروج الذهب هي الجداء بنت سعد وأما الثانية فحكى بن سعد عن بن إسحاق أنها رعلة بنت مضاض بن عمرو وقال هشام بن الكلبي هي رعلة بنت يشجب بن يعرب بن لوذان بن جرهم وقال المسعودي هي سامة بنت مهلهل بن سعد بن عوف وقال الدارقطني اسمها السيدة وقال السهيلي قيل اسمها عاتكة وقال الشريف الحراني هي هالة بنت الحارث بن مضاض ويقال سلمى ويقال الحنفاء قلت والنفس إلى ما قال بن الكلبي أميل(فتح الباری:۱/۲۹۶۔عمدۃ القاری:۲۳/۲۳۸)

فقط واللہ اعلم بالصواب

Question ID: 59 Category: Social Dealings
حنفاء کے معنی

السلام علیکم ورحمۃ اللہ

مفتی صاحب، الحمدللہ اللہ پاک ہمیں بیٹی عطا فرمانے والے ہیں۔ مجھے اور میری گھر والی کو "حنفہ" نام بہت پسند ہے(جو حضرت اسمعیل علیہ السلام کی گھر والی کا نام تھا)۔ کیا آپ اس نام کے معنی، اس کا شجرہ اور اس کو ادا کرنے کا صحیح تلفظ بتا سکتے ہیں؟

 

 

 وعلیکم السلام ورحمۃ اللہ وبرکاتہ۔

الجواب وباللہ التوفیق

حضرت اسماعیل علیہ السلام کی اہلیہ کے بارے میں کتب سیر وتواریخ میں مختلف نام منقول ہیں،ان میں سے ایک حَنفَاء ہے،جس کا آپ نے ذکر کیا، اس کے معنیٰ ٹیڑھاپاؤں ،کمان،استرا،گرگٹ وغیرہ کے آتے ہیں، اس کے علاوہ اور نام ملاحظہ فرمائیں:

(۱)رعلة۔(۲) سيدة ۔(المفصل فی تاریخ العرب:۲/۸۵) (۳)جداء۔(۴)سامۃ۔(۵)عاتکہ۔(۶) ہالۃ۔۔(۷)حنفاء۔(۸) نجدہ۔

حافظ ابن حجر ؒ نے رعلۃنام کو ترجیح دی ہے۔اور عام طور پر مؤرخین نے ان کی اہلیہ کے نام کے سلسلہ میں اسی نام کا تذکرہ کیا ہے۔اسکے معنیٰ ( راء کے زبر، عین کے سکون ،اور لام کے زبر کےساتھ)ہیں:

پیش رو جماعت ۔ (2) مادہ شتر مرغ ۔(3) اہل وعیال بال بچے یا بڑا کنبہ ، زیر پرورش افراد ۔ (4) چوپائے کے کان کی چھوٹی سی کھال جسے چیر کر پیچھے لٹکا دیا گیا ہو (5) کھجور کا لمبا درخت ۔ (6) ایک قسم کا پودا جس کا پھل بینگن جیسا اور خار دار ہوتا ہے ۔اگر اس کوراء کے پیش کے ساتھ پڑھاجائے تواس کے معنیٰ ہوں گے: انگور کی بیل کی کونپل ۔سر پر لگانے کا پھولوں کا تاج ۔

واضح رہےکہ یہ سب تاریخی اور اسرائیلی روایات میں مذکور ہے،نہ ان کی تصدیق کی جاسکتی ہے اورنہ تکذیب۔ اور نہ اس شجرہ کی ضرورت ہے اور نہ اس کااعتبار ہے۔

حديث بن عباس في تزوج إسماعيل بن إبراهيم بالمرأتين من جرهم واحدة بعد أخرى أما الأولى فقال المسعودي في مروج الذهب هي الجداء بنت سعد وأما الثانية فحكى بن سعد عن بن إسحاق أنها رعلة بنت مضاض بن عمرو وقال هشام بن الكلبي هي رعلة بنت يشجب بن يعرب بن لوذان بن جرهم وقال المسعودي هي سامة بنت مهلهل بن سعد بن عوف وقال الدارقطني اسمها السيدة وقال السهيلي قيل اسمها عاتكة وقال الشريف الحراني هي هالة بنت الحارث بن مضاض ويقال سلمى ويقال الحنفاء قلت والنفس إلى ما قال بن الكلبي أميل(فتح الباری:۱/۲۹۶۔عمدۃ القاری:۲۳/۲۳۸)

فقط واللہ اعلم بالصواب