Tuesday | 11 December 2018 | 3 Rabiul-Thani 1440

Fatwa Answer

Question ID: 66 Category: Beliefs
Is Diamond Ring the Source of Our Fights?

Assalamualaikum Warahmatullah

Is there any (physical or otherwise) effect of wearing a diamond ring? I noticed that my wife and I are having a lot of arguments and fights so we thought maybe it is because of the diamond ring. Please provide us guidance in this matter.

Walaikumassalam Warahmatullah

الجواب وباللہ التوفیق

Keeping a belief that a diamond or a stone is in itself effective (مؤثر بالذات) and that the fights are happening due to its effect is an unislamic and shirkia belief. All good or bad, peace and serenity or fights and disagreements are from Allah Subhanahau Ta‘ala and Him only. Allah Subhanahau Ta‘ala has not kept any benefit or disadvantage in the objects itself, and whatever happens is with His permission and will only. Allah Subhanahau Ta‘ala has written all of these details in our taqdir. You should try and refrain from having such thoughts and in case such thoughts do arise, read the following supplications:

اعوذ باللہ من الشیطان الرجیم آمنت باللہ ورسولہ۔

سبحان اللہ والحمد اللہ ولاالہ الا اللہ واللہ اکبر ولا حول ولا قوۃ الا باللہ العلی العظیم.

حوالہ: في ’’ صحیح مسلم ‘‘ : عن عبد اللّٰہ بن عمرو بن العاص قال : سمعت   رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم یقول : ’’ کتب اللّٰہ مقادیر الخلائق قبل أن یخلق السماوات والأرض بخمسین ألف سنۃ ‘‘ ۔

(۲/۔۳۳۵ ، کتاب القدر ، باب حجاج آدم وموسیٰ علیہما الصلوٰۃ والسلام)

فقط واللہ اعلم بالصواب

 

Question ID: 66 Category: Beliefs
کیا ڈائمنڈ کی انگوٹھی سے گھر میں لڑائیاں ہو رہی ہیں؟

السلام علیکم ورحمۃ اللہ

کیا ڈائمنڈ کا پتھر پہننے سے (جسمانی یا روحانی) کسی قسم کے خاص اثرات پیدا ہوتے ہیں؟ میں یہ دیکھ رہا ہوں کہ میرے اور میری بیوی کے درمیان کافی لڑائیاں ہو رہی ہیں ، تو ہم لوگوں نے سوچا کہ کہیں یہ ڈائمنڈ کی انگوٹھی کی وجہ سے نہ ہو رہا ہو۔ براہ کرم اس سلسلہ میں ہماری راہنمائی فرمائیے۔

 

 

 

 

وعلیکم السلام ورحمۃا للہ وبرکاتہ

الجواب وباللہ التوفیق

کسی ڈائمنڈ یا پتھر کو موثر بالذات سمجھنا اور اس کےبارے یہ تصور کہ اس کی وجہ سے لڑائی جھگڑے ہورہے ہیں یہ غیر اسلامی اور شرکیہ عقیدہ ہے،اچھا یا برا،امن وعافیت یا لڑائی جھگڑے من جانب اللہ ہوتے ہیں،دنیا کی کسی چیز میں اللہ نے نفع نقصان نہیں رکھا،جو کچھ ہوتا وہ اس کی اجازت اور ارادہ سے ہوتا ہے،اور یہ سب کچھ اللہ نے بندوں کی تقدیر میں پہلے ہی سے لکھ دیا ہے، اس طرح کے گمان اور تصور سےاپنے آپ کوبچانا چاہیے، اور ایسے خیالات کے وقت یہ دعائیں پڑھنا چاہیے۔

اعوذ باللہ من الشیطان الرجیم آمنت باللہ ورسولہ۔

سبحان اللہ والحمد اللہ ولاالہ الا اللہ واللہ اکبر ولا حول ولا قوۃ الا باللہ العلی العظیم.

حوالہ: في ’’ صحیح مسلم ‘‘ : عن عبد اللّٰہ بن عمرو بن العاص قال : سمعت   رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم یقول : ’’ کتب اللّٰہ مقادیر الخلائق قبل أن یخلق السماوات والأرض بخمسین ألف سنۃ ‘‘ ۔

(۲/۔۳۳۵ ، کتاب القدر ، باب حجاج آدم وموسیٰ علیہما الصلوٰۃ والسلام)

فقط واللہ اعلم بالصواب