Monday | 11 November 2019 | 14 Rabiul-Awal 1441

Fatwa Answer

Question ID: 69 Category: Worship
Permissibility of Paying Zakat to Social Work Organizations

Assalamualaikum Warahmatullah

We operate an Islamic history and culture museum in the USA. Our mission is to educate the American public about Islamic history and culture and the contributions Muslims have made in this world. We accomplish our goal through da'wah, outreach, educational events, and exhibitions that promote Islam in America. For example, we will be featuring a new exhibit entitled "Muslims with Christiand and Jews: An exhibition of Covenants and Co-existence". The exhibit will feature the Constitution of Medina and its contrast with the Bill of Rights. We will also feature covenants and treaties signed by prophet Muhammad, PBUH, with Christians and Jews offering them protection. We will illustrate the pluralistic and all inclusive nature of Islam since its inception, among other items which will be showcased. The exhibit is designed to combat Islamaphobia and the mis-information campaign about Islam and Muslims.

We are currently raising funds for the museum and the exhibits. The museum is a 501-C-3 organization and all donations are tax dedictable. However, some of our donors asked if they can pay their Zakat to us. I read that da'wah and educational programming in non-Muslim majority countries could qualify for Zakat under the "for Allah's sake" (Fee-Sabeelillah) masraf. However, I didn't feel comfortable declaring this to our donors without first obtaining a scholary fatwa. Could you please answe this question?

Jazak Allah Khair

 

الجواب و باللہ التوفیق

 Assalamualaikum Warahmatullah Wabarakatuh

It is incorrect to spend Zakat money in the masraf (i.e. types of people to whom Zakat money can be given to) mentioned in the question because this masraf is not a valid masraf for Zakat. As far as your belief is concerned that this service can be categorized as a masraf of Zakat due to being “Fee-Sabeelillah”, that is incorrect. Because the ulamah kiram and fuqahah have described Fee-Sabeelillah in terms of mujahideen. None of the aimma kiram have considered social work as a masraf of Zakat. 

 فقط واللہ اعلم بالصواب

Question ID: 69 Category: Worship
رفاہی اداروں کو زکوۃ دینے کا حکم

السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ

ہم ایک اسلامی تاریخ اور ثقافت سے متعلق میوزیم چلاتے ہیں، ہمارا مقصد  امریکہ  کے باشندوں تک اسلام کی تاریخ اور ثقافت کا صحیح علم پہنچانا ہے جس کے لئے  مسلمانوں کی اس دنیا میں بیش بہا خدمات کو لوگوں کے سامنے اجاگر کرتے ہیں۔ مثلا ہمارا اگلا پروگرام جو ہونے والا ہے اس کا عنوان "مسلمان عیسائی اور یہودی کے ساتھ"، جس میں  ان مذاہب و ادیان کے باہمی اشتراک اور ہم آہنگی پر روشنی ڈالی جائے گی۔ اس پروگرام میں مدینہ منورہ کے آئین کا تقابل امریکہ کے آئین سے کیا جائے گا (جو انسانوں کو دیئے جانے والے حقوق پر بات کرتا ہے)۔ اس پروگرام میں حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے جو  یہود و نثاری سے ان  کی حفاظت کے لئے معاہدے فرمائے ہیں ان پر بھی روشنی ڈالی جائے گی۔ غرض اسلام کی آفاقیت اور وسعت  کو اجاگر کیا جائے گا تاکہ اس وقت دنیا میں موجود اسلام سے نفرت ، غلط خیالات اور تعصب کو روکا جا سکے۔

ہم اس میوزیم کے لئے جو پیسا اکٹھا کرتے ہیں اس میں لوگوں سے ڈونیشن وغیرہ لیا جاتا ہے(حکومت ہماری کمپنی کو  ایک مذہبی ادارہ تسلیم کرتی ہے، اور ہمیں ٹیکس سے چھوٹ ہے)۔ ہمارے معاونین کو یہ سوال ہے کہ کیا  وہ اپنی زکوۃ اس مصرف میں دے سکتے ہیں؟ میرے علم کے مطابق "فی سبیل اللہ" کے تحت غیر مسلم ممالک میں مسلمانوں کی مدد کے اصول کے تحت ہم زکوۃ لے سکتے ہیں۔ لیکن میں بغیر کسی علمی فتوے کے یہ بات اپنے معاونین تک نہیں پہنچانا چاہتا۔ براہ کرم اس سلسلہ میں راہنمائی فرمائیے۔جزاک اللہ خیرا

 

 الجواب و باللہ التوفیق

سوال میں ذکر کردہ مصرف میں زکوۃ دینا درست نہیں کیونکہ وہ زکوۃ کا مصرف ہی نہیں۔ جہاں تک آپ کے خیال کی بات ہے کہ یہ فی سبیل اللہ میں داخل ہو سکتا ہے تو یہ صحیح نہیں، اس لئے کہ علماء اور فقہاء  نے فی سبیل اللہ کا مصداق مجاہدین کو بتلایا ہے۔ اس قسم کی رفاہی خدمات کو کسی بھی امام نے زکوۃ کا مصرف تسلیم نہیں کیا۔

  فقط واللہ اعلم بالصواب