Thursday | 14 November 2019 | 17 Rabiul-Awal 1441

Fatwa Answer

Question ID: 95 Category: Miscellaneous
Parents' Approval for Marriage

Assalamualaikum Warahmatullah

I am in love with a girl who also is in love with me. She is a person with really good habits and belongs to a good family. We love each other so much that we cannot live without each other. My parents are not agreeing for this marriage though. They finalized my marriage to take place with someone else. What should I do in this situation? Please provide me dua or wazifa so that my parents can agree to this marriage

الجواب وباللہ التوفیق

Parents always think for the best of their children, their decisions are based only on supporting them. And it generally happens that children make wrong decisions or take incorrect actions based on their inexperience and naiveness which later results in regret. Our recommendation for you is to agree with their decisions and firmly believe that it is the cautious and beneficial path for you.  However, do perform Istikhara before performing Nikah and if there is a dream as a result then consult with an expert righteous aalim to request its interpretation. If there is no dream as a result of the Istikhara, then act upon the direction towards which your qalb leans. Continue making dua to Allah Subhanahu Wa Ta‘ala and make dua that Allah Subhanahu Wa Ta‘ala helps you in making the decisions which are in your best interest.

 

Question ID: 95 Category: Miscellaneous
شادی میں والدین کی رضامندی

 

 السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ

میں ایک لڑکی سے محبت کرتا ہوں اور وہ بھی مجھ سے محبت کرتی ہے۔ وہ لڑکی اچھی عادتوں کی حامل ہے اور اچھے گھرانے سے اس کا تعلق ہے۔ ہم اتنی محبت کرتے ہیں کہ ایک دوسرے کے بغیر رہنے کا تصور نہیں کرسکتے۔ البتہ میرے والدین اس شادی کے لئے راضی نہیں ہو رہے۔ انھوں نے میری شادی کسی اور کے ساتھ طے کر دی ہے۔ میں اس مسئلے میں اب کیا کروں؟ براہ کرم کوئی ایسا وظیفہ یا دعا بتا دیں جس سے میرے والدین کا دل نرم ہو جائے اور وہ اس شادی کے لئے تیار ہو جائیں۔

 

 والدین اولادکے حق میں بہتری ہی سوچتے ہیں،ان کے فیصلے اولادکے حق میں خیر خواہ ہی پر ہی مبنی تے ہیں، اور اولاد اکثر وبیشتراپنی نادانی اور ناتجربہ کاری کی بنیاد پر غلط اقدامات اٹھاتی ہے اور پھر پچھتاوے کا سامنا کرنا پڑتا  ہے، آپ ان کے فیصلوں پرراضی رہیں،اسی میں اپنی بہتری اور عافیت سمجھیں۔ہاں نکاح سے قبل استخارہ  ضرور کرلیں،اور اگرخواب وغیرہ کی صورت میں اگر کوئی بات سامنے آئے توکسی ماہر اہل ِحق  عالم سے اس کی تعبیر معلوم کرلیں،اگر استخارہ میں خواب نہ دکھائی دیتے تو قلب کے رجحان پر عمل کریں،اور اللہ پاک سے دعا کرتے رہیں،اوراپنے حق میں  عافیت اور خیر کے فیصلوں کی دعا کرتے رہیں-